پاکستان

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا فوجی فاؤنڈیشن ہیڈ کوارٹرز کا دورہ

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے فوجی فاؤنڈیشن ہیڈ کوارٹرز کا دورہ کرکے اسپتال اور یونیورسٹی انسٹیٹیوٹ کا افتتاح کردیا اور مستقبل سے متعلق بھرپور سپورٹ کی یقین دہانی کرائی۔

پاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے فوجی فاؤنڈیشن ہیڈ کوارٹرز کا دورہ کیا ، فوجی فاؤنڈیشن ہیڈکوارٹرز آمد پر آرمی چیف کا ایم ڈی وقاراحمد نے استقبال کیا۔

آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ اس موقع پر آرمی چیف کو فوجی فاؤنڈیشن کے جاری اور مستقبل کے منصوبوں پر بریفنگ دی گئی، جنرل قمر جاوید باجوہ نے فوجی فاؤنڈیشن کی کارکردگی اور عزم کی تعریف کرتے ہوئے فوجی فاؤنڈیشن کو مستقبل سے متعلق بھرپور سپورٹ کی یقین دہانی کرائی۔

ترجمان کے مطابق دورے کے دوران آرمی چیف نے اسپتال اور فاؤنڈیشن یونیورسٹی انسٹیٹیوٹ کا افتتاح کیا۔

خیال رہے فوجی فاؤنڈیشن 1954سے مسلسل قومی خدمت میں مصروف عمل ہیں، فاؤنڈیشن نے ملکی تعمیروترقی اور معاشی خوشحالی میں مسلسل اہم کردار کیا اور صرف پچھلے سال فوجی فاؤنڈیشن نے ٹیکس کی مد میں 175ملین روپے ادا کیے، ٹیکس، ڈیوٹی، لیویزکی مد میں ادا کردہ رقم وفاقی بجٹ کا تقریباً2.45 فیصد ہیں۔

گزشتہ10سال میں ٹیکس و ڈیوٹی کی مدمیں ساڑھے1300ارب سےزائدجمع کرائےگئے ، ریٹائرڈفوجیوں کی فلاح کیلئے قائم ادارے سے لاکھوں سویلیئنز بھی مستفید ہوئے۔

فوجی فاؤنڈیشن کے 71 فیصد ملازمین سویلین جبکہ صرف 29 فیصد ریٹائرڈ فوجی ہیں ،اس فاؤنڈیشن کے موجودہ مینجنگ ڈائریکٹروقاراحمدملک خود ایک سویلین ہیں۔

ریٹائرڈفوجیوں کی اکثریت40سے45سال کی عمرمیں ریٹائرڈجونئیررینکس کی ہے ، ان ملازمین کوکارآمدافرادی قوت بنایا جاتا ہے تاکہ معیشت پربوجھ نہ بنیں۔

فوجی فاؤنڈیشن کےمنصوبوں اوررفاہی کاموں سے 9ملین افرادمستفیدہورہےہیں اور مستفیدہونےوالےافرادملکی آبادی کا 4.5فیصد ہیں۔

تعلیم اورصحت کےشعبوں میں بالخصوص فوجی فاؤنڈیشن کی خدما ت بےمثال ہے ، 10سالوں میں فوجی فاؤنڈیشن نے صحت اورتعلیم پر79بلین روپے خرچ کیے ، 45بلین روپے صحت جبکہ 34بلین روپے تعلیمی منصوبوں پر خرچ ہوئے۔

اس وقت ملک بھر میں فوجی فاؤنڈیشن کے133تعلیمی ادارے قائم ہیں جبکہ صحت عامہ کے74مراکز بھی چلا رہا ہے ، صحت عامہ کےمراکز میں کئی بڑے اسپتال، کلینکس اور میڈیکل سنٹرز شامل ہیں ، ہیلتھ کئیرسسٹم سے مستفید 80فیصد مریض غازیوں،شہیدوں کے لواحقین ہیں۔


subscribe YT Channel


Source

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

ADVERTISEMENT
Back to top button