صحت

بلڈ پریشر کے ممکنہ اسباب اورعلامات کیا ہو سکتی ہیں؟ حیران کن تحقیقات جانیے

عمر بڑھنے کے ساتھ کچھ لوگوں میں ہائی بلڈ پریشر کا امکان بڑھ ہوتا ہے کیونکہ خون کی نالیوں میں گاڑھا پن زیادہ ہو جاتا ہے جس کی وجہ سے بلڈ پریشر ہائی ہوتا ہے۔

بلڈ پریشر کے اوپر اور نیچے ہونے سے کسی کی بھی صحت کی سنگین صورت حال پیدا ہونے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں جن میں فالج، ہارٹ اٹیک، ہارٹ فیل اور گردے کی بیماری بھی شامل ہے۔

اگر کسی کا بلڈ پریشر معمول کی حدود میں ہو تو یہ جاننے کا واحد طریقہ یہ ہے کہ ڈاکٹر کے پاس بلڈ پریشر چیک کروائیں تاکہ یہ معلوم کیا جا سکے کہ یہ غیرمعمولی ہے اور پیچیدگیوں سے بچنے کے لیے دوا کے ذریعے علاج کیا جائے یا بغیر دوا کے ٹینشن پریشانی ختم کر کے ریکور کیا جا سکتا ہے۔

یہ کہا جاتا ہے کہ لو بلڈ پریشر کو بہ نسبت ہائی کے زیادہ مسئلہ نہیں سمجھا جاتا ہے تاہم مستقل کم ہونا بھی بہتر نہیں، ایسے میں طبی علاج ضروری ہو جاتا ہے۔

2020 کے ایک تجزیے کے مطابق خواتین کو مردوں کے مقابلے میں بلڈ پریشر کی بیماری زیادہ ہوتی ہے۔ محققین کا یہ بھی کہنا ہے کہ خواتین میں قلبی مرض مختلف طرح سے ظاہر ہوتا ہے لیکن ہائی بلڈ پریشر کی تشخیص کے لیے کٹ آف پوائنٹ عمر کے ساتھ تبدیل نہیں ہوتا ہے۔

امریکن ہارٹ ایسوسی ایشن (اے ایچ اے) نے بلڈ پریشر کے پانچ درجات بیان کیے ہیں جو یہ ہیں۔

بی پی کا ہائی ہونا

ہائی بلڈ پریشر کی کوئی قابل توجہ علامات نہیں ہے لہٰذا کسی شخص کے لیے اس کے زیادہ یا کم ہونے کا واحد طریقہ یہ ہے کہ اس کو چیک کر لیا جائے۔

طویل مدتی ہائی بلڈ پریشر آپ کے بہت سے شدید اور ممکنہ طور پر جان لیوا خطرات کو بھی بڑھا سکتا ہے، جیسے دل کی بیماری، ہارٹ اٹیک، برین ٹیومر، بند کا بند ہو جانا، پیریفرل آرٹیریل بیماری، گردوں کا عارضہ اور ویسکولر ڈیمنشیا وغیرہ،

اس کے علاوہ بلند فشار خون سے وابستہ خطرے کے عوامل میں کسی شخص کی طرز زندگی، صحت کی موجودہ صورتحال اور موروثیت بھی شامل ہے۔

کچھ دوائیں بلڈ پریشر کو بھی بڑھا سکتی ہیں۔ مثال کے طور پر شوگر کے 10 مریضوں میں سے چھ ہائی بلڈ پریشر کا شکار ہوتے ہیں۔

عام طور پر ڈاکٹر صرف کم تعداد میں مریضوں میں ہائی بلڈ پریشر کی وجہ کا تعین کرسکتے ہیں اور اس طرح وہ مریضوں کو بلڈ پریشر کو معمول کی حد تک کم کرنے کے اقدامات کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے مدد کرنے پر زور دیتے ہیں اگر وہ وجہ کا تعین کرنے سے قاصر ہیں۔


subscribe YT Channel


Source

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

ADVERTISEMENT
Back to top button