اہم خبریں

’ شہباز شریف اپنے بھائی کو دھوکہ دے دیں تو آج وزیر اعظم ہوں گے‘مریم نواز کا دعویٰ

’ شہباز شریف اپنے بھائی کو دھوکہ دے دیں تو آج وزیر اعظم ہوں گے‘مریم نواز کا …

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن ) پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ شہباز شریف سے سلیکٹڈعمران خان کو خوف ہے کیوں کہ شہباز شریف کو وہ  اپنے متبادل کے طور پر دیکھتا ہے،شہباز شریف اپنے بھائی کو دھوکہ دے دیں تو آج وزیر اعظم ہوں گے ،جہانگیر ترین گروپ اس سے کہیں بڑا ہے جتنا نظر آتا ہے ، تحریک انصاف(پی ٹی آئی) ٹوٹ نہیں رہی بلکہ ٹوٹ چکی ہے،آر پار تو ہوا اور حکومت ہل گئی  ہے،ن لیگ حکومت کی غلطیوں کا بوجھ اٹھانے کے لیے تیار نہیں ، مسلم لیگ ن انہیں آسانی سے فرار کا راستہ نہیں دے گی ، میں چاہتی ہوں یہ پانچ  سال پورے کرے تاکہ یہ کل کو عوام کو یہ نہ کہہ سکے کہ ہمیں پانچ سال ملتے تو ہم یہ کر دیتے ہم وہ کردیتے ، جو تین سالوں میں کچھ نہیں کر سکا ، وہ پانچ سالوں میں بھی کچھ نہیں کر پائے گا۔

نجی ٹی وی چینل کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے مریم نواز شریف نے کہا کہ اس وقت حکومت بنانا ہمارا مقصد ہوتا تو یہ دو منٹ کی گیم تھی لیکن ہم چاہتے ہیں کہ پاکستان کو آئین کے تحت چلایا جائے،حکومتیں بنانےاورگرانےمیں اسٹیبلشمنٹ اور اداروں کا کردار ختم ہو اور ہر ادارہ اپنی آئینی حدود میں رہتے ہوئے کام کرے ،شہباز شریف کا اگر چہ مزاج مختلف ہے لیکن ن لیگ میں بیانیہ صرف نواز شریف کا ہی چلے گا،شہباز شریف صاحب بھی بیانیہ نواز شریف کا ہی مانتے ہیں اور میں اس سوال کا جواب دے دے کر تھک گئی ہوں۔

مریم نواز شریف نے کہا کہ مسلم لیگ ن کو توڑنے کیلیے کیا کچھ کیا گیا لیکن آج مسلم لیگ ن تو نہیں ٹوٹی بلکہ پی ٹی آئی ضرور ٹوٹ چکی ہے،مسلم لیگ ن کے ہر لیڈر کو جیل میں ڈالا گیا لیکن مسلم لیگ ن نہیں ٹوٹی،میں جب بھی جہانگیر ترین گروپ دیکھتی ہوں کیونکہ مجھے تو پتہ تھا کہ یہ لوگ اب پی ٹی آئی کیساتھ نہیں ہیں کیونکہ ان میں سے بہت سے ایسے لوگ ہیں جو ہم سے رابطے میں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ نہیں چاہتے کہ نواز شریف پاکستانی سیاست میں ایکٹیو ہوں  کیوں کہ اگر نواز شریف سیاست میں ان ہوں گے تو نہ سلیکٹرز نظر آئیں گے اور نہ سلیکٹڈ کہیں نظر آئیں گے، اب لوگ مسلم لیگ ن کے ساتھ کھڑے ہوں گے ، اس ملک کی ترقی کے لیے کھڑے ہوں گے، جیسے ہی الیکشن کا وقت قریب آئے گا لوگ نواز شریف کے ساتھ کھڑے ہوں گے ، ووٹ کو عزت دو بیانیہ کا ساتھ دیں گے ، ن لیگ کو ووٹ دیں گے اور جیت نواز شریف کی ہوگی۔مریم نواز شریف نے کہا کہ کراچی نہ جانے کا فیصلہ میاں صاحب کی مشاورت اور انکے حکم سے ہوا،ہم پچھلے تین دن سے کورونا کی صورتحال دیکھ رہے تھےلیکن کل سے جو خبریں آرہی تھیں تو پھر سوچا کہ ایک سیٹ  کی خاطر یا سیاسی فائدے کی خاطر کراچی کے عوام  کی زندگیوں کو خطرے میں ڈالنا مناسب نہیں ہے،میں کراچی کے شہریوں کو پیغام دینا چاہتی ہوں کہ میں آپ سے ملنے آنا چاہتی تھی لیکن مجھے آپ کی زندگی اور اس کا تحفظ عزیز ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ(پی ڈی ایم)نے جو ان کو نقصان پہنچایا ہے شائد یہ اس کا ازالہ کبھی بھی نہ کرسکیں،پی ڈی ایم نے ان کی ہر چیز کو عوام کے سامنے رکھا ہے اور بڑے پرزور انداز میں سامنے رکھا ہے،پی ڈی ایم نے اپنا کام بہترین طریقے سے کیا ہے،جہاں تک میرے بیانات کی بات ہےتو میرے بیانات کو بڑا ہائی لائٹ کیا جاتا ہےاور اس میں سے میم میخ بھی نکالی جاتی ہے ،ہر چیزکے مختلف معنی نہیں ہوتے ۔

مریم نواز کا کہنا تھا کہ سینیٹ الیکشن پہ جو کہنا تھا وہ میں نے کھل کے کہا اور اب اسے بار بار دہرانا نہیں چاہیے، پیپلزپارٹی بالکل بھی میرا ہدف نہیں ہے اور میں اپنے اہداف کو اچھی طرح جانتی ہوں، میں نے اپنا ایک موقف دیا تھا لیکن میں الزام در الزام اور ایک دوسرے پر کیچڑ اچھالنے میں شامل نہیں ہونا چاہتی،میں نے ’باپ‘سے ووٹ لینے پر ایک موقف دیا تھا جو حقیقت پر مبنی تھا ،اس میں پیپلز پارٹی میرا ٹارگٹ نہیں تھی  لیکن جو ہوا بہت برا ہوا اور وہ نہیں ہونا چاہئے تھا ،بلاول بھٹو زرداری کے ساتھ میرے اچھے تعلقات تھے،میں ایک حد سے زیادہ اس میں آگے نہیں جانا چاہتی،وہ میرا ہدف نہیں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ این اے 249میں ہم پیپلز پارٹی کے مد مقابل ہیں ،لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ ہم اخلاق سےگری ہوئی گفتگو کریں اور ایک دوسرے پر اٹیک کریں ،مجھے یقین ہے کہ ہم 249سے جیتیں گے کیونکہ شہباز شریف وہاں سے ٹھیک ٹھاک لیڈ سے جیت چکے تھے ،ان کو ان ووٹ چوروں نے ہرایا تھا ۔

مزید :

اہم خبریںقومی




Source

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

ADVERTISEMENT
Back to top button